سرکاری وسائل کا استعمال، شریف خاندان کے افراد و ملازمین سرکاری طیاروں میں لاہور پہنچے

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل کیے جانے والے سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کا خاندان بدستور سرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کر رہا ہے جبکہ نواز شریف کی ریلی کو سرکاری حیثیت دے کر تمام سرکاری مشینری کو مصروف عمل کردیا گیا ہے۔نجی ٹی وی کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نواز شریف سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل قرار دیئے جانے کے بعد پارٹی کے صدر بھی نہیں رہے تاہم پارٹی کے حکومت میں ہونے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شریف خاندان کے لیے عوام کے پیسوں سے سرکاری وسائل کا بے دریغ

استعمال کیا جارہا ہے۔ذرائع کے مطابق شریف خاندان کے افراد پنجاب حکومت کے 2 سرکاری طیاروں میں لاہور پہنچے۔ نواز شریف کے بچوں حسن نواز، حسین نواز اور مریم نواز سمیت شریف خاندان کے 17 ارکان 2 طیاروں میں لاہور پہنچے جو سرکاری امور کے لیے رکھے گئے ہیں۔شریف خاندان کی 2 ملازمائیں بھی سرکاری طیارے سے لاہور پہنچیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ شریف خاندان کو لے کر آنے والے دونوں طیارے لاہور کے اولڈ ایئرپورٹ پر اترے۔ایک طیارے میں مریم نواز کی بیٹی مہرالنسا اور داماد بھی سوار تھے۔سابق وزیر اعظم کی ریلی کے لیے بھی سرکاری مشینری کا بے دریغ استعمال جاری ہے۔صوبہ پنجاب کے شہر کھاریاں میں فائر بریگیڈ کی گاڑی کے ذریعے بینرز لگائے گئے۔ ریلی کی تیاری کے لیے سرکاری عملے کی ڈیوٹیاں لگائی گئیں۔ریلی کی سیکورٹی کے نام پر راولپنڈی کو مکمل طور پر سیل کردیا گیا۔پنجاب پولیس نے ریلی کے روٹ پر آنے والی ہر دکان اور ہوٹل کو بند رکھنے کی ہدایت کردی۔موبائل ہیلتھ یونٹ بھی برطرف وزیر اعظم کی ریلی کے لیے الرٹ کر دیا گیا۔نواز شریف کی ریلی کے آغاز سے قبل وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور کابینہ کے وزرا نے بھی کار مملکت چھوڑ کر اپنے قائد سے ملاقات کی اور ان کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں